Short Messages
By Zahid Ikram

facebook.com/Zahid.Ikram.Official/

جمعہ کے عربی خطبہ کی تصدیق بالقلب
غیر عربی زبان اور فقہاء کا موقف:
جہاں تک مالکیہ ،شافعیہ اور حنابلہ کا تعلق ہے وہ سب اس بات پر متفق ہیں کہ عربی زبان کے علاوہ کسی اور زبان میں جمعے کا خطبہ جائز ہی نہیں اور اگر عربی زبان میں خطبہ پر قدرت ہوتے ہوئے غیر عربی میں خطبہ دیا گیا تو وہ صحیح نہ ہو گا اور نہ ہی جمعہ صحیح ہو گا بلکہ مالکیہ کا کہنا تو یہ ہے کہ اگر مجمع میں کوئی بھی شخص عربی خطبہ پر قادر نہ ہو تو جمعہ ساقط ہو جائے گا اور اس کی بجائے ظہر پڑھنا ہو گی۔

خطبہ جمعہ کے بارے میں بھی امام ابو حنیفہ رحمۃاللہ علیہ کا موقف یہ ہے کہ غیر عربی زبان میں خطبہ دینا مکروہ تحریمی یعنی ناجائز ہے لہذا لوگوں کو اس سے منع کیا جائے گا لیکن اگر کسی نے اس مکروہ تحریمی کا ارتکاب کر لیا تو کراہت کے باوجود صحت جمعہ کی شرط پوری ہو جائے گئی اور اس کے بعد ادا کیا ہوا جمعہ صحیح ہو جائے گا

کیا جمعہ کے عربی خطبہ میں جو اقرار کیا جاتا ہے ہم اس اقرار کی تصدیق بالقلب بھی کر رہے ہیں یا کہ نہیں؟ عربی ہماری زبان نہیں ہے لہذا ہم تصدیق بالقلب کرنے سے قاصر ہیں!
عربی خطبہ ہم چھوڑ نہیں سکتے تو ہمیں بھر کیا کرنا چائیے؟
میں نہ ہی کوئی مذہبی مبلغ یا کوئی سکالر ہوں اور نہ ہی عالم، میں صرف ایک طالبعلم کی حیثیت سے اپنی رائے پیش کر رہا ہوں۔
نمازجمعہ میں خطیب حضرات کو چاہیے کہ جہاں وہ جمعہ کا خطبہ اپنی اپنی زبانوں پیں پیش کرتے ہیں وہیں وہ عربی خطبوں کا ترجمعہ بھی دورانِ تقریر پیش کر دیا کریں تاکہ تمام نمازی اپنی تصدیق بالقلب بھی کر لیا کریں
اگر آپ مجھ ناچیز کی رائے سے متفق ہیں تو اس پیغام کو برائے کرم عام کی جئے جزاک اللہ
طالبِ دعا
زاہد اکرام

Poetry By Zahid Ikram https://www.facebook.com/BehreBekraan

More Short Messages

Back to Index Page